مالی معاملات کے متعلق آپ کا رویہ

مصنف: اعجاز عالم | موضوع: مالی معاملات


بلاشبہ ہمارے مالی حالات ہماری زندگی میں اہم کردار ادا کرتے ہیں، جو شخص زندگی میں اپنے مالی معاملات میں بہتر انداز اختیار کرتا ہے وہ ہمیشہ مطمئن اور خوش حال رہتا ہے۔ آپ کے ارد گرد بہت سے لوگ ایسے ہوں گے جو ایک جیسی آمدنی ہونے کے باوجود مختلف انداز سے زندگی بسر کر رہے ہوں گے۔ ایک نہایت اعلیٰ اور کامیاب اندازِ زندگی گزار رہا ہو گا جبکہ دوسرا ہمیشہ مالی پریشانیوں کا رونا روتا نظر آئے گا۔

آخر ایسا کیوں ہے؟

اگر آپ تھوڑا غور سے اس بات کا جائزہ لیں گے تو آپ کو پتہ چل جائے گا کہ ان دونوں اقسام کے لوگوں کا 'مالی رویہ' ایک دوسرے سے یقیناً مختلف ہو گا۔ اب یہ مالی رویہ کیا ہوتا ہے؟ مالی رویہ وہ انداز ہے جس کے مطابق ہم اپنے مالی معاملات طے کرتے ہیں۔ چاہے وہ اپنی آمدن بڑھانے کا معاملا ہو یا روز مرہ خرچ کا، بات صرف مالی رویے پر آ کر ختم ہو جاتی ہے۔ اب دیکھنا یہ ہے کہ آیا ہم مثبت مالی رویے کے حامل ہیں یا منفی۔

اپنا مالی رویہ جانچنے کے لیے آپکو مندرجہ ذیل عوامل کا جائزہ لینا ہو گا:

1۔ آپکا ذاتی اور خاندانی پس منظر

خاندانی یا ذاتی مالی پس منظر آپکے مالی اطوار پر گہرا اثر رکھتا ہے۔ اگر آپ خاندانی طور پر امیر ہیں، آپکے گھر میں ہمیشہ سے روپے پیسے کی فراوانی رہی ہے تو آپ یقیناً مالی معاملات کے بارے میں اتنے سنجیدہ نہیں ہوں گے۔ آپ کبھی بھی چھوٹے موٹے خرچوں کی پرواہ نہیں کریں گے۔ یہ ایک انسانی فطرت ہے کہ اگر اسے کام کیے بغیر بہت سی دولت میسر ہو یا اسکی آمدنی ضرورت سے زیادہ ہو تو اسکی اتنی پرواہ نہیں کرتا۔

ب۔ آپکی موجودہ مالی حالت

اگر آپکی موجودہ مالی حالت مضبوط ہے اور آپ نے اپنی ماہانہ آمدنی کا خاطر خواہ بندوبست کیا ہوا ہے تو بھی آپ کبھی کبھار اپنے مالی معاملات میں غیر احتیاطی برت سکتے ہیں۔ چونکہ آپ کے پاس وافر دولت ہے لہذا آپ کا مالی رویہ بھی اس دولت کے زیرِ اثر آ سکتا ہے۔

ج۔ آپکے مستقبل کے مالی ہدف

زندگی میں تقریباً ہر شخص کی کچھ خواہشات ہوتی ہیں جنکو وہ مستقبل میں پورا کرنے کے لیے تگ و دو کرتا ہے۔ اگر آپ نے اپنے مستقبل کے لیے کوئی مالی ہدف مقرر کیا ہے تو اسکے اثرات یقیناً آپ کے موجودہ مالی رویہ پر پڑیں گے۔ مثلاً اگر آپ نے سوچا ہے کہ تین سال کے عرصے میں آپ نے ایک نئی گاڑی خریدنی ہے تو اتنے عرصے کے لیے آپکو ماہانہ اتنی رقم بچانی ہو گی کہ آپ سہولت کے ساتھ اپنے مستقبل کے ہدف کو حاصل کر سکیں۔ اس بچت کے دوران آپکو اپنی کئی چھوٹی موٹی خواہشات کو روکنا ہو گا۔ لہذا اپنے مالی ہدف تک پہنچنے کی لگن آپکے مالی رویے کو کنٹرول کرے گی۔

کیا میں اپنے مالی حالت بہتر کر سکتا ہوں؟

کیا میرے مالی حالت بہتر ہو سکتے ہیں؟ یہ سوال اکثر ہمارے ذہنوں میں اٹھتا ہے۔ خوش قسمتی سے اس کا جواب 'ہاں' میں ہے۔ ہر وہ شخص جو تھوڑی بہت مالی سوجھ بوجھ رکھتا ہو وہ تھوڑی سی کوشش سے اپنے مالی حالات کو بہتر بنا سکتا ہے۔ اس کے لیے قطعاً ضروری نہیں کہ آپ کے پاس مالیات میں کوئی ماسٹر ڈگری ہو۔ اپنا جائزہ خود لیجئے اور جب آپ اچھی طرح جان لیں گے کہ آپ کا مالی رویہ کیا ہے تو پھر آپ اپنے حالات کے مطابق اسکو بہتر یا مزید بہتر بنانے کی کوشش کریں۔ مالی حالت کو بہتر بنانے کی آپکی کوشش اسوقت تک سود مند ثابت نہیں ہو سکتی جب تک آپ ذاتی مالی معاملات کے تینوں عوامل پر مکمل دسترس حاصل نہیں کرتے اور وہ ہیں:

کمانا ۔ کفایت شعاری ۔ سرمایہ کاری

مالی معاملات کے متعلق چند ضروری باتیں اور آپ کی لگن اور جذبہ آپکے مالی حالات کو یکسر تبدیل کر سکتا ہے۔ PakOwn.com کے کے مالی معاملات کے چینل کا تفصیلاً مطالعہ کیجئے بہت جلد آپ اپنے مالی

معاملات کے متعلق بہت کچھ جان سکیں گے۔

Share

You May Also Like